• 1 اکتوبر, 2020

محسوس ہوتى ہے

ہمہ دم اپنى آنکھوں مىں نمى محسوس ہوتى ہے
فضا ہى بلکہ سارى شبنمى محسوس ہوتى ہے
وہ دل جو گرمىٔ جذبات سے سرگرم رہتا تھا
اب اس پر برف کى تہہ سى جمى محسوس ہوتى ہے
نظر مىں گھومتے جب ہىں سکوتِ ساز کے لمحے
تو اپنى نبض بھى اس پل تھمى محسوس ہوتى ہے
جہاں فرقت ہمارے بىچ مىں حائل ہے صدىوں کى
وہىں پہ اىک قربت باہمى محسوس ہوتى ہے
نہ جانے کىا کىا مىں نے نہ جانے کىا ہوا مجھ سے
مزاجِ دوستاں مىں برہمى محسوس ہوتى ہے
لگائے لاکھ کوئى خود پہ صبر و ضبط کے پہرے
اذىّت درد کى تو لازمى محسوس ہوتى ہے
بہت سے زخم پہلے بھى لگے جو بھر گئے لىکن
ٹسک جو دل مىں اب ہے دائمى محسوس ہوتى ہے
عجب احساسِ تنہائى اتر آىا مرے دل مىں
مجھے تو آج اپنى بھى کمى محسوس ہوتى ہے

(صاحبزادى امتہ القدوس)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 1 ستمبر 2020

اگلا پڑھیں

الفضل آن لائن 2 ستمبر 2020