• 18 اکتوبر, 2021

ایڈیٹر کے نام خطوط

• مکرمہ بشریٰ نذیر آفتاب۔ سسکاٹون ، کینیڈا سے لکھتی ہیں۔
18ستمبر2021ء کے روزنامہ الفضل میں کمپوزنگ اور پروف ریڈنگ کے بارے ہدایات بعنوان ’’ہدایات بابت کمپوزنگ و پروف ریڈنگ‘‘ پڑھا۔ آپ نے کمپوزنگ اور پروف ریڈنگ سے متعلق پچاس راہنما اصولوں کوبیان کر کے یقیناً میرے جیسے نئے لکھنے والوں پر بڑا احسان کیا ہے۔اُمید کرتی ہوں کہ یہ محنت شاقہ سے لکھے گئے تمام نکات روز نامہ الفضل آن لائن کے تمام قلمی معاونت کرنے والوں اور قارئین کے لیے ہر لحاظ سے ممد و معاون ثابت ہونگے۔ ان شاءاللہ !اللہ تعالیٰ ہمیشہ آپ کے ساتھ ہو اور اس کارِ خیر میں آپ کا معاون و مددگار بھی۔ آمین

• مکرمہ عائشہ چوہدری ۔جرمنی سے لکھتی ہیں:
حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ کی خدام الاحمدیہ جرمنی کے اجتماع میں شمولیت کی تصاویر اور وڈیوز سوشل میڈیا پر دیکھی تھیں مگر آپ نے جس انداز میں ان لمحات کا ذکر ’’صحابہ سے ملا جب مجھ کو پایا‘‘ میں کیا ہے وہ ان لائیو وڈیوز اور تصاویر سے کہیں زیادہ خوبصورت اور متاثر کن ہے ۔اللہ تعالی ہم سب کو اپنے پیارے حضور ایدہ اللہ تعالی کی ہر بات، ہر لفظ، ہر حکم کو اپنے اندر اتارنے کی توفیق دے اور ہم سب ان کی اطاعت کرنے والے ہوں ۔آمین

• مکرمہ شمیم اختر ۔مسی ساگا ،کینیڈا سے لکھتی ہیں:
خدا تعالی آپ کو اور آپ کی ٹیم کو بہترین جزا دے جس محنت سے آپ الفضل کے مختلف شعبہ جات میں کام کر رہے ہیں اور معلومات کانئے سے نیا ذخیرہ ہم تک پہنچا رہے ہیں اس کی جزا تو بے شک خدا ہی آپ کودے گا ۔الفضل اخبار میں اردو کے اسباق کا سلسلہ بہت ہی فائدہ مند ہے۔ ہم اردو بولنے والے بھی جن کے قواعد و ضوابط سے نا آشنا تھے بہت فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ خدا اس زبان سے محبت اور اسکو سیکھنے کا شوق ہماری نئی نسلوں میں بھی پیدا کرے۔ آمین۔

• مکرمہ صفیہ بشیر سامی ۔کینیڈا سے لکھتی ہیں۔
میں آج کل کینیڈا آئی ہوئی ہوں۔ اور لندن سے ایک دن پہلے یہاں اپنا الفضل پڑھ لیتی ہوں اور جب آپ کی طرف سے ملتا ہے تو اور بھی اچھا ہی لگتا ہے ۔اللہ تعالیٰ آپ کی نیکیوں اور دن رات کی محنت کو قبول فر مائے آمین

• مکرم طاہر احمد ۔ فن لینڈ سے لکھتے ہیں :
جزاکم اللہ احسن الجزاء۔ اس مضمون بعنوان ’’صحابہ سے ملا جب مجھ کو پایا‘‘ کے سلسلے کو لکھنے کا۔خاکسار کی عادت ہے کہ اگر تو کسی وجہ سے جاگ رہا ہوں تو یا توفن لینڈ وقت کے مطابق 2 بجے کا انتظار کرتا ہوں تاکہ الفضل اول وقت میں پڑھ کر سو سکوں یا پھر صبح نماز وغیرہ کی ادائیگی کےبعد ناشتے سے قبل الفضل پڑھنے کی عادت ہے۔ اور الحمد للہ۔ سال ہا سال سے مطالعہ کتب کی عادت ہونے کے باعث پڑھنے کی سپیڈ کافی تیز ہو چکی ہے۔ اس لئے الفضل بہت جلدی ختم ہو جاتا ہے اور تشنگی رہ جاتی ہے لیکن اس تشنگی کو بعض مضامین یا اقتباسات دوبارہ پڑھ کر دور کر لیتا ہوں۔

آپ کا یہ مضمون بھی ایسا ہی ہے اور جو باتیں آپ اس مضمون میں بیان کر رہے ہیں ،اس کا اس سے بہتر کوئی عنوان نہیں ہو سکتا تھایعنی ‘‘صحابہ سے ملا جب مجھ کو پایا’’اور اس قسط میں موجودہ دور کی اور موجودہ نسل کی مثالیں دے کے آپ نے اس مضمون سے جو تعلق باندھا ہے وہ بہت خوب ہے اور آنحضرتﷺ اور حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی قوت قدسی کا بہت بڑا ثبوت ہے کہ یہ اثر زمانے کی طوالت کے باوجود نسل در نسل خلافت کی برکت کے منتقل ہو رہا ہے۔ اللہ تعالیٰ آپ کی قوت تخیل و قلم میں ہمیشہ مزید برکت ڈالتا رہے اور اس اثر انگیزی سے لوگوں کو مستفیض ہونے کی توفیق دے۔ آمین۔

• مکرم ظہیر احمد طاہر۔ جرمنی سے لکھتے ہیں :
آج 23 ستمبر کے روزنامہ الفضل آن لائن میں ’’صحابہ سے ملا جب مجھ کو پاپا‘‘ کے موضوع پر آپ کے مضمون کی چوتھی قسط پڑھنے کو ملی۔ الحمدللہ ۔اس مضمون میں آپ نے اطاعت خلافت سے متعلق جن نہایت ایمان افروز واقعات کا ذکر کیا ہے۔ ان کے متعلق یہ عرض کرنا چاہتا ہوں کہ ان تمام واقعات کے ظہور کے وقت اللہ تعالیٰ کے فضل سے خاکسار یا تو خود ان مواقع پر موجود تھا یا خاکسار کے بچے ان میں شامل تھے۔ الحمدللہ علیٰ ذالک۔

• ایک قاری نے لکھا ۔
ماشاء اللہ، بہت پُر اثر اور ایمان افروز تحریر ہے۔ حسب موقع احادیث کے حوالہ جات نے اس اداریہ کی شان دو بالا کردی ہے۔ اللھم زد فزد

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 4 اکتوبر 2021

اگلا پڑھیں

چھوٹی مگر سبق آموز بات