• 4 فروری, 2023

ایک معبود اللہ، محمد نبی

میرے نور العلی کی یہ تقدیر ہے
یہ خدا اور محمد کی تصویر ہے
کوزہ گر کی محبت کی تعبیر ہے
ہر زمانے میں اس کی ہی تشہیر ہے
میرے روحِ رواں کی جو تدبیر ہے
ہر مسلماں کی شہ رگ پہ تحریر ہے
ایک معبود اللہ، محمد نبی

تم مساجد سے کلمہ مٹا دو تو کیا
تم مناروں بھی ان کے گرا دو تو کیا
چاند تاروں پہ پہرے بٹھا دو تو کیا
اس جہاں میں منادی کرا دو تو کیا
آسماں گیر نعرۂ تکبیر ہے
ہر مسلماں کی شہ رگ پہ تحریر ہے
ایک معبود اللہ، محمد نبی

خوں فقیروں کا ہر دم بہاتے ہو تم
قومِ فرعوں سے آگے ہی جاتے ہو تم
روحِ اسلام یکسر بھلاتے ہو تم
ظلم کرتے ہو، صبر آزماتے ہو تم
اپنا دستور الفت کی تعمیر ہے
ہر مسلماں کی شہ رگ پہ تحریر ہے
ایک معبود اللہ، محمد نبی

خود کو مولا کے ہم رنگ کرتے رہیں
آؤ! یک جان، یک روح بن کے رہیں
ہم محبت کے نغمات گاتے رہیں
دیں کی تبلیغ ہر آن کرتے رہیں
قلبِ مومن میں ہر دم جو تصویر ہے
ہر مسلماں کی شہ رگ پہ تحریر ہے
ایک معبود اللہ، محمد نبی

(زاہدہ رحمٰن۔ ڈیٹرائٹ امریکہ)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 16 نومبر 2022

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالی