• 19 جون, 2024

ڈنمارک میں نئے سال کی آمد پر مثالی وقار عمل

ہر سال کی طرح اس سال بھی مجلس خدام الاحمدیہ ڈنمارک کو نئے سال کی آمد پر کوپن ہیگن ٹاوٴن ہال کے سامنے مثالی وقار عمل کرنے کی توفیق ملی جس میں 35 خدام، اطفال اور انصار نے شرکت کی۔

سال نو کاآغاز باجماعت نماز تہجد اور نماز فجر کی ادائیگی سے ہوا جو کہ محترم محمد زکریا خانصاحب امیر ومشنری انچارج جماعت ڈنمارک نے پڑھائی۔ نماز فجر کی ادائیگی کے بعد محترم امیر صاحب نےدرس دیا اوردعا کروائی۔جس کے بعد وقار عمل کے لئے احباب کوپن ہیگن ٹاوٴن ہال کی طرف روانہ ہوئے۔ وقار عمل کے لئے پہلے سے ہی انتظامیہ سے رابطہ کیا گیا تھا جنہوں نے بیگ اور دیگر سامان مہیا کیا۔ ایک گھنٹہ سے کچھ زائد وقت احباب نے وقار عمل کیا۔ اس موقع پر خدام نے محبت سب سے نفرت کسی سے نہی کی جیکٹس پہنی ہوئی تھی جس کو ٹاوٴن ہال سے گزرنے والے لوگ دیکھتے اور اس پیغام کوبڑا سہراتے۔ وقار عمل کے اختتام پر مسجد نصرت جہاں میں ناشتہ کا انتظام تھا جو کے خاص طور پر محترم امیر صاحب ممبران جماعت کے لئے تیار کیا تھا۔

میڈیا

ہر سال وقار عمل کی خبر کومیڈیا بڑی کوریج دیتا ہے سال نو کے آغازسے ہفتہ قبل ہی نیشنل ٹی وی اوردیگر میڈیا کے لوگ مسجد فون کر کے وقار عمل کے پروگرام کے بارہ میں معلومات لیتے ہیں اور اس کو اپنے کیلنڈر میں شامل کر لیتے ہیں۔ امسال بھی نیشنل ٹی وی نے جماعت سے رابطہ کیا اور وقار عمل کے دوران وقار عمل کے منا ظر کو ریکار ڈ کیا ساتھ ہی ساتھ انٹرویو کیا اور اس بارہ میں سوالات کئے۔ اس وقار عمل کی خبر کو نیشنل ٹی وی DR,TV2,TV2 Lorry نے اپنی نیو ز میں کوریج دی۔ اسی طرح Presse-fotos.dk کے نمائندہ بھی موجود تھے جنہوں نے تصاویر اور انٹرویو لیااور اس کو اپنی ویب سائٹ اور سوشل میڈیا پر شیئر کیا۔ اسی طرح وقار عمل کی نیوز کو فیس بک اور ٹو ئٹر پر سات لاکھ لوگوں نے دیکھا اور آٹھ ہزار لوگوں نے اس پر کمیٹس کئے اور اس اقدام کو سراہا۔ ایک صاحب Søren Anderson صاحب نے بذریعہ ای میل اپنی نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ آپ نے لکھا کہ میں جہاں آپ صفائی کرتے ہیں اس جگہ کے قریب ہی رہتا ہوں اور ہر سال آپ کو صفائی کرتا دیکھتا ہوں اور یہ دیکھ کر مجھے بڑی خوشی ہوتی ہے۔ امسال میں نے سوچا آپ کاشکریہ ادا کرنا چاہیے اس لئے آپ کو ای میل کے ذریعہ اپنی نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں اور آپ کا شکریہ ادا کرتا ہوںاور مجھے آپ کا سلوگن محبت سب سے نفرت کسی سے نہیں بہت اچھا لگتا ہے۔

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ ہر سال وقار عمل کی وجہ سے لوگ جماعت کی طرف متوجہ ہوتے ہیں اور مختلف پوسٹ پر کمینٹس پڑھنے سے پتہ چلتا ہے کہ لوگ پھر تحقیقات کرتے ہیں کے یہ کس قسم کے مسلمان ہیں اور بعض لوگ عقائد کے حوالہ سے بھی کمینٹس کرکے لکھتے ہیں کے یہ احمدیہ جماعت سے تعلق رکھتے ہیں جنہوں نے ڈنمارک میں سب سے پہلی مسجد تعمیر کی ہے۔ ان کمینٹس کرنے والوں میں حکومتی نمائندہ، میئر اور دیگر احباب شامل ہوتے ہیں۔ نئے سال کے آغاز میں کئے جانے والے اس وقارعمل کا لوگ سارا سال تذکرہ کرتے ہیں اور کئی لوگ جو دوران سال مسجد وزٹ کے لئے تشریف لاتے ہیں وہ اس کا تذکرہ بڑے اچھے الفاظ میں کرتے ہیں۔

اللہ تعالی اس وقار عمل میں شامل تمام ممبران کو جزائے خیر عطا فرمائے اور ہمیں ہمیشہ خدمت خلق کے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی توفیق عطا فرماتا چلا جائے۔آمین

(رپورٹ: محمد اکرم محمود۔ نمائندہ الفضل ڈنمارک)

پچھلا پڑھیں

دنیا بھر میں جماعت احمدیہ کی مساجد (کتاب)

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالی