• 1 دسمبر, 2020

میرا سارا کلام تیرے نام

میرا جو بھی ہے نام، تیرے نام
میرا ہر اک مقام تیرے نام
میری سب منزلیں، سبھی رستے
ہر قدم، گام گام، تیرے نام
میرا دل، میری جان، میرا بدن
سب ہیں تیرے غلام، تیرے نام
میرے ہجر و وصال، ماہ و سال
گردشِ صبح و شام تیرے نام
خال و خد میرے، میرے دیدہ و دل
جس قدر بھی ہیں جام، تیرے نام
گلشنِ جاں کا میرے ایک اک پھول
ہے بصد احترام تیرے نام
ایک اِک شعر، ایک ایک خیال
میرا سارا کلام تیرے نام
حسن سے تیرے ہو کے بہرہ مند
کریں الفت کو عام تیرے نام
تجھ سے آغاز، تجھ سے ہی انجام
ابتدا، اختتام تیرے نام

(میر انجم پرویز 2007ء۔ دمشق)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 21 اکتوبر 2020

اگلا پڑھیں

الفضل آن لائن 22 اکتوبر 2020