• 15 اگست, 2022

جلسہ یوم خلافت جماعت احمدیہ لٹویا

اللہ تعالیٰ کے خاص فضل وکرم سے جماعت احمدیہ لٹویا کو 27 مئی 2022ء کو لٹویا کے دارالحکومت ریگا (Riga) میں واقع مشن ہاؤس میں اپناجلسہ یوم خلافت منعقد کرنے کی توفیق ملی۔ نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد تمام حاضرین نے حضرت امیرالمؤمنین ایّدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کا خطبہ جمعہ براہ راست سنا اور دیکھا۔ خطبہ ختم ہونے کے بعد خاکسار (بشارت احمد شاہد مبلغ سلسلہ و صدر جماعت) کی زیرصدارت جلسہ یوم خلافت کا آغاز ہوا۔ مکرم انتصار محمود صاحب نے قرآن کریم سے سورت نور کی آیات 56تا57 تلاوت کیں اور اُن کا انگریزی ترجمہ پیش کیا۔ اس کے بعد مکرم مزمّل احمد خان صاحب نے نظم ’’خلیفہ دل ہمارا ہے خلافت زندگانی ہے‘‘ بہت خوبصورت آواز میں پڑھ کراس کا انگریزی ترجمہ پیش کیا۔ پھر مکرم خاقان احمد صائم صاحب سیکرٹری تبلیغ نے خلافت کی پیشگوئی کے متعلق ایک حدیث مع انگریزی ترجمہ پیش کی۔ بعدہ مکرم عطاء الصبور خان صاحب جنرل سیکرٹری نے ’’رسالہ الوصیّت‘‘ سے قدرت ثانیہ کے بارہ میں موجودعظیم الشّان پیشگوئی کے مبارک الفاظ پڑھ کر سنائے۔ اس کے بعد مکرم توقیر احمد صاحب سیکرٹری تعلیم نے ’’یوم خلافت کا پس منظر‘‘ کے موضوع پر تقریر پیش کی۔ پھر مکرم جاذب احمد شاہد صاحب سیکرٹری تربیّت نے ’’خلافت‘‘ کے عنوان سے تقریر کی۔ اس کے بعد مکرم فضل عمر شاہد صاحب سیکرٹری مال و تحریکات نے ’’برکات خلافت‘‘ کے موضوع پر تقریرکرنے کی سعادت حاصل کی۔ بعدہ مکرم محسن سلطان صاحب نے ’’خلافت ایک شجر برکات ہے‘‘ کے عنوان سے تقریر کی توفیق پائی۔آج کے جلسہ کی آخری تقریر خاکسار نے پیش کی۔ خاکسار نے اپنی تقریر میں خلفائے احمدیّت کے قبولیّت دعا کے واقعات پیش کئے۔

اس جلسہ میں اللہ تعالیٰ کے فضل سے احباب جماعت کے علاوہ ایک ڈچ، ایک انڈین، ایک سری لنکن اور ایک ازبک (Uzbek) غیر احمدی بھائی کو بھی شامل ہونے کی توفیق ملی۔ مکرم گیری (Gary) صاحب ایک ڈچ نومسلم ہیں۔ تقریبًا دو ماہ قبل انہوں نے جماعت سےرابطہ کرکے نماز جمعہ کے لئے مشن ہاؤس آنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ اللہ تعالیٰ کے خاص فضل سےاُن کو جماعت احمدیہ کے ساتھ نماز جمعہ کی ادائیگی اور احباب جماعت کا خلوص وپیاراتنا پسند آیا کہ اب وہ ہر جمعہ کے لئے حاضر ہوجاتے ہیں اور بڑے اخلاص کا اظہار کرتے ہیں۔

خاکسار نے اپنی تقریر سے قبل اُن سے بھی اظہار خیال کی درخواست کی تو اُنہوں نے بتایا کہ آج سے 25 سال قبل پہلی دفعہ اُن کا فرانکفورٹ (جرمنی) میں جماعت احمدیہ سے رابطہ ہوا تھا جب وہ ابھی مسلمان نہیں ہوئے تھے۔ جماعت کی طرف سے انہیں انگریزی ترجمہ قرآن کی ایک کاپی تحفہ دی گئی جس کا انہوں نے مطالعہ کیا ہواہے۔ اُنہوں نے بتایا کہ یہ ترجمہ قرآن انہیں بہت پسند ہے اور یہ اُن کے موازنہ مذاہب کے مطالعہ کی بنیاد بنا۔ چند سال قبل اُن کو اسلام قبول کرنے کی توفیق ملی۔ بعض مسلمان ممالک میں نام نہاد علماء کی طرف سےکی جانے والی جماعت احمدیہ کی مخالفت کا بھی انہیں علم ہے اور وہ جماعت کی مخالفت کرنے والوں کے مؤقف کو غلط اورمبنی برظلم سمجھتے ہیں۔ جو انگریزی ترجمہ قرآن انہیں جرمنی سے ملا تھا وہ انہوں نے لٹویا مشن کو دےدیا ہے۔اب یہاں سے مکرم ملک غلام فرید صاحب مرحوم کا انگریزی ترجمہ مع مختصر تفسیر اور رشین ترجمہ قرآن لے کر اُس کا مطالعہ کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ دوسری جماعتی کتب بھی پڑھ رہے ہیں اور جماعتی تعلیمات اور نظام جماعت کی صداقت کا برملا اظہار کرتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ انہیں جلد قبول حق کی توفیق عطا فرمائے۔

اس جلسہ میں کچھ ایسے مہمان بھی شریک تھے جو اُردو زبان نہیں سمجھتے تھے اس لئے جلسہ کی ساری کاروائی انگریزی زبان میں عمل میں لائی گئی۔

جلسہ کے اختتام پر تمام حاضرین کی خدمت میں کھانا پیش کیا گیا۔ یہ کھانا ہمارے نومسلم بھائی مکرم گیری (Gary) صاحب کی طرف سے تھا۔ اُن کی شدید خواہش تھی کہ اُن کی طرف سے احباب جماعت کو ایک ڈنردیا جائے۔ چنانچہ صدرصاحبہ لجنہ اماء اللہ لٹویا اور اُن کی ٹیم نے گھر پر ہی کھانا تیار کیا تاہم اُس کے تمام اخراجات مکرم گیری (Gary) صاحب نے ادا کئے۔ فجزاھم اللّٰہ احسن الجزاء

دعا کے ساتھ اس بابرکت جلسے کا اختتام ہوا۔ جلسہ کی کل حاضری 19 تھی جس میں 4 غیر احمدی بھائیوں کے علاوہ 10 خدام، 1 ناصر، 3 لجنہ اور 1 بچہ شامل تھے۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ وہ اپنے خاص فضل سے ہمیں برکات خلافت سے بھرپور حصّہ عطافرمائے اور ہم سب کو خلافت احمدیہ کا سلطان نصیر بننے کی توفیق دے۔ آمین

(رپورٹ: بشارت احمد شاہد۔ نمائندہ الفضل آن لائن لٹویا)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 27 جون 2022

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالیٰ