• 20 جولائی, 2024

چلو پڑھتے ہیں سال نو پہ ہم نظمیں محبت کی

چلو آؤ، دعاؤں سے کریں آغازِ سالِ نو
کرے روشن دلوں کو آنسوؤں کے دیپ کی ہی لو

خدا محفوظ رکھے ساری دنیا کو وباؤں سے
نئے اس سال میں دے دے رہائی سب بلاؤں سے

چلو آؤ منائیں جشن آنکھوں کے ستاروں سے
چلو اِس سالِ نو کو رنگ دیں نُوری بہاروں سے

چلو جا کر اذانیں دیں محبت کے مناروں سے
چلو جا کر گلے ملتے ہیں اپنے روٹھے یاروں سے

چلو لیتے ہیں سب جا کر دعائیں ہم خلافت کی
چلو پڑھتے ہیں سالِ نو پہ ہم نظمیں محبت کی

چلو جا کر امامِ وقت سے اِک عہد کرتے ہیں
دل و جاں میں اطاعت کا نیا اِک رنگ بھرتے ہیں

نئے اِس سال کی آمد پہ ہم کچھ خواب بُنتے ہیں
بھلا کر تلخیاں ساری گلِ شاداب چُنتے ہیں

چلو پھولوں کی خوشبو سے ہوا پر ’’پیار‘‘ لکھتے ہیں
چلو نفرت کے صحرا پر محبت کو چھڑکتے ہیں

نئے اِس سال میں مولا! ہوائیں پھول ہوں ساری
دعائیں دل سے جو نکلی ہیں وہ مقبول ہوں ساری

(خواجہ عبدالجلیل عباد، جرمنی)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 31 دسمبر 2021

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالیٰ