• 15 اپریل, 2024

اولاد کو سات سال کی عمر میں نماز کا حکم

عَنْ عَمْرِو بْنِ شُعَیْبٍ عَنْ اَبِیْہِ عَنْ جَدِّہِ قَالَ قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ مُرُوْآ اَوْلَادَکُمْ بِالصَّلَاۃِ وَھُمْ اَبْنَآءُ سَبْعِ سِنِيْنَ وَاضْرِبُوْھُمْ عَلَیْھَاوَھُمْ اَبْنَآءُ عَشْرٍ وَّ فَرِّ قُوْابَیْنَھُمْ فِی الْمَضَاجِعِ

(سنن ابی داؤدکتاب الصلوٰۃ باب متی یومر الغلام بالصلوٰۃ)

ترجمہ: حضرت عمرو بن شعیبؓ اپنے والد سے اور وہ اپنے دادا سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا ہے کہ اپنی اولاد کو سات سال کی عمر میں نماز کا حکم دو پھر دس سال کی عمر تک انہیں اس پر سختی سے کار بند کرو نیز ان کے بستر الگ الگ بچھاؤ۔

پچھلا پڑھیں

خطبہ ثانیہ کی اہمیت اور اس میں بیان شدہ سنہری اسباق

اگلا پڑھیں

الفضل آن لائن 2 فروری 2023