• 21 ستمبر, 2020

اللہ تبارک و تعالیٰ کے کچھ فضيلت رکھنے والے فرشتے ذکر کی مجالس کی تلاش میں چکر لگاتے رہتے ہيں

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمايا :۔
اللہ تبارک و تعالیٰ کے کچھ فضيلت رکھنے والے فرشتے ذکر کی مجالس کی تلاش میں چکر لگاتے رہتے ہيں۔ جب وہ کوئی ايسی مجلس پاتے ہيں جس ميں (اللہ تعالی کا) ذکر ہو رہا ہو تو ان کے ساتھ بيٹھ جاتے ہيں اور اپنے پروں سے انہيں گھير ليتے ہيں۔ پھر جب لوگ منتشر ہو جاتے ہيں تو وہ (فرشتے) بھی اوپر چڑھتے اور آسمان تک جا پہنچتے ہيں۔ پھر اللہ عزوجل ان سے سوال کرتا ہے_ حالانکہ وہ ان سے زيادہ جانتا ہے_ تم کہاں سے آئے ہو؟ وہ کہتے ہيں ہم تيرے بندوں کے پاس سے آئے ہيں ، وہ تيري تسبیح اور تيری بڑائی بيان کررہے تھے اور تجھ سے مانگ رہے تھے۔ اللہ فرماتا ہے وہ مجھ سے کيا مانگ رہے تھے؟ وہ (فرشتے) عرض کرتے ہيں کہ ۔۔۔وہ تجھ سے تیری بخشش مانگتے ہیں۔ اس پر اللہ فرماتا ہے ميں نے انہيں بخش ديا اور جو انہوں نے مانگا ميں نے انہيں عطا کيا اور جس چيز سے انہوں نے پناہ طلب کی ميں نے انہيں پناہ دی۔ حضور ﷺ فرماتے ہيں اس پر وہ (فرشتے) عرض کرتے ہيں يارب! ان ميں فلاں سخت خطاکار شخص بھی تھا جو وہاں سے گذرا تو ان کے پاس بیٹھ گيا۔ آپ ﷺ نے فرمايا: وہ (اللہ) فرمائے گا: ميں نے اسے بھی بخش ديا کيونکہ يہ ايسے لوگ ہيں کہ ان کے پاس بیٹھنے والا بھی بے نصیب نہيں رہتا۔

(مسلم کتاب الذکر باب فضل مجالس الذکر)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 4 اگست 2020

اگلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 05 اگست 2020ء