• 5 اگست, 2020

اپنے بچوں کے لئے ہمیشہ دعائیں کرتی رہیں

حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ فرماتے ہیں:
پھر ہر وقت یہ بھی ذہن میں رہے کہ یہ مختلف وقتوں میں ہم نے جو نمازیں پڑھی ہیں ان کا اثر اب ہمارے ذہنوں پر ہر وقت قائم رہنا چاہیے ہرکام کرتے وقت اللہ کے نام سے شروع کیا جا ئے۔ اللہ کے ذکر سے زبانیں تر رکھی جائیں درود شریف پڑھا جائے تو خدا تک پہنچنے کا راستہ اب رسول اللہؐ کے ذریعہ سے ہی ہے۔ بچوں کو اس ماحول میں رکھیں۔

حضرت خلیفۃ المسیح الثالث رحمہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا تھا: ایک دفعہ عورتوں کو نصیحت کرتے ہوئے کہ سکول بھجوانے کے لئے ویسے بھی جب مائیں اپنے بچوں کو تیار کر رہی ہوتی ہیں اس وقت بھی ساتھ ساتھ بچوں کے لئے دعائیں کرتی جائیں۔ تواس سے ایک تو بچوں میں بھی دعائیں کرنے کی عادت پیدا ہو جائے گی دوسرے ان بچوں کواللہ تعالیٰ کے فضلوں کا وارث بنا رہی ہوں گی آپ ان دعاؤں کے ذریعے سے اور یہ بچے جب بھی آپ سے جدا ہوں گے وقت گزاریں گے سکول کا یا جہاں بھی کھیلنے گئے ہیں تو ہمیشہ اللہ تعالیٰ کی حفاظت میں ہوں گے ان دعاؤں کے حصار میں ہوں گے جو آپ ان کے لئے ہر وقت کرتی رہتی ہیں پھر خاوندوں کو بھی توجہ دلائیں نمازوں کے لئے انہیں اٹھائیں خاوند بیوی کونماز کے لئے اٹھا نا اور بیوی کا خاوند کو نماز کے لئے اٹھانا دونوں کو حدیثوں میں آیا ہے کہ ثواب ہوتا ہے اس کا۔

ہمیشہ یاد رکھیں کہ انسان کی پیدائش کا مقصد اللہ تعالیٰ کی عبادت ہے۔ یہ دنیاوی چیزیں تو عارضی ہیں ختم ہو جائیں گی۔ ساٹھ، ستر،اسّی سال کی عمر میں اللہ کے حضور حاضر ہونا ہی ہے اللہ تعالیٰ ہم سب کو ان نیکیوں پر قائم کرے اور آپ سب اللہ تعالیٰ کی رضا حاصل کرنے والی ہوں اور جماعت کی تعلیم پر عمل کرنے والی ہوں۔ جماعت کا وقار بلند کرنے والی ہو اور اس اجتماع میں جو کچھ آپ نے حاصل کیا اس پر اللہ تعالیٰ ہمیشہ آپ کو عمل کرنے کی توفیق دے۔

(سالانہ اجتماع لجنہ و ناصرات UK سے خطاب فرمودہ 19/اکتو بر 2003)

پچھلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 5 جولائی 2020ء

اگلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 6 جولائی 2020ء