• 2 جون, 2020

سید الاستغفار پڑھنے کی تحریک ارشاد حضرت خلیفۃ المسیح الرابعؒ

سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الرابع ؒ نے 31دسمبر 1998ء کو عالمی درس قرآن میں فرمایا کہ رمضان کا مہینہ استغفار کا مہینہ ہے۔ بہت لوگ حاجت روائی کے لئے خط لکھتے ہیں۔ان کو یاد رہے کہ حاجت براری سے پہلے استغفار ضروری ہے۔رسول کریم ؐ کا وعدہ ہے کہ پھر ان کو رزق دیا جائے گا اور تنگیاں دور کرسی جائیں گی۔آنحضرتؐ نے فرمایا اس شخص کو مبارک ہو جس کے نامہ اعمال میں استغفار بہت پایا گیا۔ حضور نے فرمایا جو استغفار عام لوگ کرتے ہیں وہ اس سے بہت مختلف جو آنحضرت ؐ فرمایا کرتے تھے۔ اس ضمن میں حضور نے بخاری کتاب الدعوات سے آنحضرتؐ کا استغفار پیش فرمایا اور فرمایا یہ بہت اعلیٰ مضمون ہے جن احباب جماعت کو اس کا عربی متن یادرکھنا مشکل ہو اس کا ترجمہ اور مضمون حاضر رکھیں اور اپنے الفاظ میں استغفار کیا کریں۔ یہ سید الاستغفار ہے اس کو رمضان کے تحفے کے طور پر یاد رکھیں۔

آنحضرت ؐ نے فرمایا ہے کہ جو کوئی یقین کے ساتھ دن کو یہ دعا کرے اور شام سے پہلے مرجائے تو وہ اہل جنت میں سے ہوگا۔اسی طرح جو شخص رات کو یہ دعا کرے اور صبح ہونے سے پہلے مرجائے تو وہ بھی اہل جنت میں شامل ہوگا۔

(الفضل 12جنوری 1999ء)

ذیل میں سیدالاستغفار کا اصل متن اور ترجمہ درج کیا جارہا ہے۔

اللّٰهُمَّ أَنْتَ رَبِّى، لاَ إِلٰهَ إِلاَّ أَنْتَ، خَلَقْتَنِى وَأَنَا عَبْدُكَ، وَأَنَا عَلَى عَهْدِكَ وَوَعْدِكَ مَا اسْتَطَعْتُ، أَعُوذُ بِكَ مِنْ شَرِّ مَا صَنَعْتُ، أَبُوءُ لَكَ بِنِعْمَتِكَ عَلَىَّ وَأَبُوءُ بِذَنْبِى، فاغْفِرْ لِى ، فَإِنَّهُ لاَ یَغْفِرُ الذُّنُوبَ إِلاَّ أَنْتَ

(بخاری کتاب الدعوات باب افضل الاستغفار حدیث نمبر5831)

ترجمہ: اے اللہ! تو میرا رب ہے، تیرے سوا کوئی معبود نہیں، تو نے ہی مجھے پیدا کیا ہے اور میں تیرا بندہ ہوں اور میں حسب توفیق تیرے عہد اور وعدے پر قائم ہوں،میں اپنے عمل کے شر سے تیری پناہ میں آتا ہوں، میں اپنی ذات پر تیری نعمتوں اور احسانوں کا اعتراف کرتا ہوں اور اپنے گناہوں کا بھی اعتراف کرتا ہوں۔ پس تو مجھے بخش دے کیونکہ تیرے سوا کوئی گناہوں کو بخشنے والا نہیں۔

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 8 مئی 2020

اگلا پڑھیں

Covid-19 اپ ڈیٹ 09۔مئی2020ء