• 29 فروری, 2024

مجلس خدام الاحمدیہ سیرالیون کے تحت سالِ نو کا پروگرام

جدت کے نام پر کئی تقریبات انسانی زندگی کی ضروریات میں شامل کر دی گئی ہیں جبکہ ان سے بآسانی اجتناب ممکن ہے۔ لوگ اپنی مذہبی اور معاشرتی اقدار کے خلاف دیگر رسومات و رواجوں پر بلا سوچے سمجھے عمل کرتے ہوئے اسے اپنی زندگیوں کا حصہ بناتے جا رہے ہیں۔ اس دور میں جماعت احمدیہ ہی وہ واحد جماعت ہے جو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے متبعین کو ہر ملک و قوم کے رسوم و رواج سے بچا کر اصل اسلامی تعلیم کی جانب موڑ رہی ہے۔انہی تقریبات میں سالِ نو کا آغاز پوری دنیا کے ہر ملک اور ہر رنگ و نسل کے لوگوں کو ایک ایسا پلیٹ فارم مہیا کرتا ہے جس پر مذہبی اقدار کی دھجیاں اڑا دی جاتی ہیں۔ لیکن اس زمانہ میں بھی جماعت احمدیہ سے وابستہ دین اسلام کے پیروکار اپنی دینی اقدار کو قائم رکھے ہوئے ہیں۔

سیرالیون اگرچہ مسلم اکثریتی ملک ہے لیکن کرسمس اور نئے سال کو بھی بطور تہوار مکمل طور پر منایا جاتا ہے۔ ہر عمر کے مسلمان بھی عیسائیوں، ہندوؤں اور دیگر مذاہب کے ساتھ سال کا آخری ہفتہ شور و غوغا، ناچ گانے اور دیگر لغویات میں مصروف رہتے ہیں۔ مجلس خدام الاحمدیہ سیرالیون کے تحت سال نو کے آغاز پر خدام اور اطفال کو زمانے کی اس رو سے بچانے کے لیے ایک موثر تربیتی پروگرام تشکیل دیا گیا۔ اس پروگرام کا مقصد خدام اور اطفال کو خلیفہٴ وقت کے ارشاد پر لبیک کہنا اور من و عن عمل کو یقینی بنانا تھا۔

محض اللہ تعالیٰ کے فضل سے یکم جنوری 2023ء کو مکرم محمد مورث کمارا صاحب صدر مجلس خدام الاحمدیہ سیرالیون کی منظوری سے شعبہ تربیت کے تحت مجلس خدام الاحمدیہ سیرالیون کو سال نو کا کامیاب پروگرام منانے کی توفیق ملی۔ پروگرام سے قبل نیشنل عاملہ کی آن لائن میٹنگ ہوئی۔ پروگرام کے انفوگرافکس بنا کر شیئر کئے گئے۔ خدام کے وٹس ایپ سٹیٹس اور ڈسپلے پکچر کے لئے خصوصی امیجز بنائے گئے جس خدام کے علاوہ لجنہ اور انصار نے بھی لگایا۔ اقتباسات، شارٹ ویڈیوز اور میسیجز بھجوائے گئے۔

پروگرام کے تحت نئے سال کے سنگم پر نوافل کا اہتمام کیا گیا۔ بیشتر مجالس میں باجماعت نوافل ادا کیے گئے۔ نیز اکثر مجالس میں خدام اور اطفال نے ساری رات مساجد میں ہی گزاری تا کہ علی الصبح نماز تہجد اجتماعی طور پر ادا کی جائے مبادا گھر جانے سے نماز تہجدرہ جائے۔ اسی طرح خدام و اطفال نے نفلی روزہ رکھا اور عیادت مریضان کے لیے ہسپتال گئے اور مریضان کو نئے سال کی مبارکباد دی اور ان کی صحت یابی کے لیے دعا بھی کی۔ نماز تہجد، اجتماعی سحری، نماز فجر اور دروس کے بعد خدام و اطفال نے تلاوت بھی کی۔ انفرادی طور پر صدقہ دیا گیا نیز حضور انور کی خدمت میں دعائیہ خطوط لکھے گئے۔ پودے لگائے گئے۔

اسی طرح پروگرام کے مطابق مجالس میں مثالی وقار عمل کا انعقاد کیا گیا۔ خدام و اطفال نے سڑکوں سے پلاسٹک بیگز اور کچرا اٹھایا، مساجد کی اندرونی و بیرونی صفائی کی گئی۔ نالیوں کی صفائی کے ساتھ ساتھ سڑکیں برابر کی گئیں نیز مختلف خالی پلاٹس اور wharfs کی صفائی کی گئی۔ انصار، لجنہ و ناصرات بھی وقار عمل میں بھرپور حصہ لینے کے ساتھ ساتھ دیگر پروگرامز میں شامل ہوئیں۔ اسی طرح بعد نمازِ عصر فٹ بال کی گیمز کا انعقاد کیا گیا۔ امیر الموٴ منین حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے 30؍دسمبر 2022ء کے خطبہ جمعہ میں جماعت کو جن دعاؤں کی تحریک فرمائی وہ بھی خدام و اطفال سمیت تمام احباب جماعت تک فوری پہنچانے کی کوشش کی گئی۔

احباب جماعت سے دعا کی درخواست ہے کہ اللہ تعالیٰ ان پروگراموں کو باثمر فرمائے اور خدام و اطفال کو پنجوقتہ نماز قائم کرنے کی توفیق عطا فرماتا چلا جائے۔ آمین

(ذیشان محمود۔ نائب صدر مجلس خدام الاحمدیہ سیرالیون)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 13 فروری 2023

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالی