• 14 اگست, 2022

پہلا جلسہ سالانہ پرنسپ

تعارف اور جماعت کا قیام: ساؤتومے و پرنسپ دو جزیروں ساؤتومے (São Tomé (اور پرنسپ (Príncipe) پر مشتمل براعظم افریقہ کا ایک چھوٹا سا ملک ہے جو کہ اٹلانٹک اوشن (بحراوقیانوس) میں وسطی افریقہ کے ملک گابوں (Gabon) سے شمال اور گنی ایکٹوریل سے شمال مغرب میں واقع ہے۔ پرنسپ جزیرے میں جماعت کا پودا مکرم و محترم انصر عباس صاحب مبلغ انچارج وصدر جماعت احمدیہ ساؤتومے و پرنسپ کے ذریعے نومبر 2018 میں لگا۔ اس جزیرے پر سو فیصد عیسائی تھے۔ قیام احمدیت کے بعد عیسائی پادریوں کی طرف سے شدید مخالفت بھی ہوئی لیکن ہمیشہ کی طرح اللہ تعالیٰ نےجماعت کو ترقی دی۔ اب تک اللہ تعالیٰ کے خاص فضل سے نومبائعین کی تعداد (تین سو) سے بڑھ چکی ہے۔ دسمبر 2020میں اس جزیرے کے گاؤں پورتو ریال میں اسلام احمدیت کی طرف سےپہلی مسجد بنائی گئی۔

محض اللہ تعالیٰ کے فضل سےمورخہ 21مئی 2022کو پرنسپ جزیرہ پر جماعت کو اپنا پہلا جلسہ سالانہ منعقد کرنے کی توفیق ملی۔ جلسہ سالانہ کا عنوان تھا ’’خلافت امن وسلامتی، عدل اور بھائی چارہ کی ضامن ہے‘‘ جلسہ سالانہ کے لئے وہاں کے تمام نومبائعین کو مدعو کیا گیا تھا۔ وہاں کے ریڈیو پر بھی اعلان کیا گیا۔ جلسہ کے دن فجر سے قبل ہی شدید بارش شروع ہو گئی اور جلسہ ختم ہونے سے کچھ دیر قبل تک ہوتی رہی۔ پہلا جلسہ ہونے کی وجہ سے بڑی گھبراہٹ تھی کی لوگ زیادہ شامل نہیں ہو سکیں گے کیونکہ عمومی طور پر اس جزیرہ کے لوگ بارش میں گھروں سے نہیں نکلتے۔ حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کی خدمت میں فوری طور پر دعا کاخط لکھا گیا جس کے نتیجے میں بارش نومبائعین کو جلسہ میں شرکت کرنے سے روک نہ پائی اور 11 مختلف مقامات سے 117(ایک سو سترہ) افراد جلسہ میں شامل ہوئے۔

صبح دس بجے جلسہ کا آغاز تلاوت قرآن پاک اور نظم سے کیا گیا۔ جلسہ میں کل چار تقاریر ہوئیں۔ 1۔ جلسہ سالانہ کی اہمیت وبرکات۔2۔ نماز باجماعت کی اہمیت۔ 3۔ قرآن پاک نجات کا سرچشمہ ہے۔ 4۔ خلافت امن وسلامتی، عدل اور بھائی چارہ کی ضامن ہے۔

پہلی دو تقاریر کے بعد 20 منٹ کا وقفہ کیا گیا جس میں ریفریشمنٹ کی گئی۔ دوبارہ تلاوت اور نظم کے بعد دوسرا سیشن شروع کیا گیا۔ تقاریر سے قبل نومبائعین نے احمدی ہونے پر اپنے تاثرات کا اظہار کیا۔ سوال و جواب بھی ہوئے۔ آخری دو تقاریر کے بعد مبلغ انچارج صاحب نے دعا کروائی اور ترانے گائے گئے۔ جلسہ کے اختتام پر نماز ظہر و عصر ادا کی گئی۔ پھر شاملین جلسہ نے کھانا تناول کیا اور اپنے اپنے گھروں کو روانہ ہو ئے۔ تمام نومبائعین پہلی دفعہ جلسہ سالانہ میں شامل ہو کر بہت خوش ہوئے۔

تاثرات: محترم جوزے ایمانوئل صاحب نے کہا میں پہلی دفعہ جلسہ میں شامل ہوا ہوں۔ مجھے بہت خوشی ہوئی۔ میری خواہش اور دعا ہے کہ یہ جلسہ ہر سال منعقد ہو۔ پہلے میرا بیٹا احمدی ہوا تھا۔ اس وقت ہمیں اسلام کا کچھ علم نہیں تھا۔ میرے بیٹے نے مجھے بھی اس مذہب کی طرف راغب کیا۔ اب یہی نجات کا راستہ ہے۔

یونیورسٹی کے ایک طالب علم محترم والدو (Waldo) صاحب نے کہا کہ مجھے ابھی کچھ ہی عرصہ ہوا کہ اسلام میں داخل ہوا ہوں۔ اسلام کی تعلیمات امن و محبت، ایک دوسرے کا خیال رکھنا، والدین کی عزت کرنا، میرے لئے ہدایت کا موجب بنیں۔ آج یہاں پہلے جلسہ سالانہ میں شامل ہونا میرے لئے اعزاز کی بات ہے۔ اسلام کی تعلیمات سن کر میرے ایمان میں بہت اضافہ ہوا۔

ایک سکول ٹیچر محترم ولکے (Vilké) صاحب نے کہا کہ جلسہ میں پہلی دفعہ شامل ہوا ہوں۔ جلسہ کی تعلیمات نے میرے دل پر بہت اثر کیا ہے۔ شدید بارش میں اتنے لوگوں کا جلسہ سالانہ میں شامل ہونا کسی معجزہ سے کم نہیں تھا۔ اب ہمیں اپنے احمدی ہونے پر فخر ہے۔۔ اس جزیرے پر پہلے اسلام کا کسی کو علم نہیں تھا۔ ہم اسلام کو اچھا مذہب نہیں سمجھتے تھے۔ اب پتا چلا کہ اسلام بہت اچھا مذہب ہے۔ اس کی تعلیمات نجات کا راستہ ہیں۔

اللہ تعالیٰ کرے کہ یہ پہلا جلسہ سالانہ اس جزیرے کے احمدیوں اور تمام لوگوں کے لئے بہت بابرکت ہو۔ یہ جلسہ یہاں کی تمام سعید روحوں کواسلام احمدیت کی طرف کھینچ لانے والا ہو۔ آمین

(رپورٹ: انصر عباس۔ نمائندہ الفضل آن لائن ساؤتومے و پرنسپ)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 15 جون 2022

اگلا پڑھیں

ارشاد باری تعالیٰ