• 30 نومبر, 2021

اے طالع مرے، زندہ ترا نام رہے گا

اے طالع مرے، زندہ ترا نام رہے گا
تُو تا بہ ابد باعثِ اکرام رہے گا
معلوم تھے سب تجھ کو محبت کے قرینے
جو تو نے دیا زندہ وہ پیغام رہے گا
تو رشک کے قابل ہے مرے یوسفِ کنعاں!
تو ایسا اُجالا ہے صبح و شام رہے گا
ہے عہدِ وفا تو نے بہت خوب نبھایا
یہ ذکر ہر اک کوچے ہر اک گام رہے گا
اے پیارے! تجھے پیارا خلافت نے کہا ہے
اب تیری یہ پہچان، یہی نام رہے گا
اک ہیرا تھا جو ہم سے جدا ہو گیا لیکن
وہ زندۂ جاوید فلک بام رہے گا

(بشارت محمود طاہر)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 15 اکتوبر 2021

اگلا پڑھیں

رزق اور عمر بڑھانے کا نسخہ