• 29 مئی, 2020

منتخب اشعار

ہر حکم ترا صورت خورشید عَلَم ہے
ہر بات تری لوح زمانہ پہ رقم ہے

کوثر سے لب خامہ کو دھو لوں تو کروں ذکر
حقّا کہ ترا ذکر ہی معراج قلم ہے

ہستی کا اعتبار مجھے ڈھونڈتا رہا
میں اڑ گیا ، غبار مجھے ڈھونڈتا رہا

میں ذات سے نکل کے ملا کائنات میں
لیکن کسی کا پیار مجھے ڈھونڈتا رہا

ہر منزل حیات سے گزرا ہوں یوں قمرؔ
اڑتا ہوا غبار مجھے ڈھونڈتا رہا

قمرؔ کون جانے ، کٹے کس طرح دن
فرشتے بتاتے رہے جرم گِن گِن

خطاؤں کا پُتلا ہوں مشہور لیکن
شفاعت کے چھینٹوں سے دھویا ہوا ہوں

قصہ نہیں ہے ذات کا ، ہے یہ سفر حیات کا
بخشا گیا تمہیں قمرؔ غم ساری کائنات کا

سارے جہاں کو ساتھ لو ، لے کر غمِ جہاں چلو
دنیا نئی بسائیں ہم ، ڈھونڈیں نیا جہاں چلو

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 18 مئی 2020

اگلا پڑھیں

لاک ڈاؤن سے اپنائی گئی خوبیاں و اچھائیاں