• 30 نومبر, 2020

آنحضرتﷺ ،متفرق کمالات کے جامع وجود

حضرت مسیح موعودؑ سرتاج الانبیاء محمد مصطفیٰ ﷺ کی ذات با برکات کے بارے میں فرماتے ہیں کہ
’’ہمارے نبی ﷺ تمام انبیاء کے نام اپنے اند ر جمع رکھتے ہیں کیونکہ وہ وجود پاک جامع کمالات متفرقہ ہے ۔ پس وہ موسیٰ بھی ہے اور عیسیٰ ؑ اور آدم ؑ بھی اور ابراہیمؑ بھی اور یوسف ؑ بھی اور یعقوب ؑ بھی ۔ اسی کی طرف اللہ جل شانہ اشارہ فرماتا ہے۔ فَبِھُدَاھُمُ اقْتَدِہ یعنی اے رسول اللہ! تو ان تمام ہدایات متفرقہ کو اپنے وجود میں جمع کر لے۔ جو ہر ایک نبی خاص طورپر اپنے ساتھ رکھتا تھا۔ پس اس سے ثابت ہے کہ تمام انبیاء کی شانیں آنحضرت ﷺ کی ذات میں شامل تھیں اور در حقیقت محمد ﷺ کا نام ﷺ اسی کی طرف اشارہ کرتا ہے کیونکہ محمد ﷺ کے یہ معنی ہیں کہ بغایت تعریف کیا گیا۔ اور غایت درجہ کی تعریف تبھی متصور ہو سکتی ہے کہ جب انبیاء کے تمام کمالات متفرقہ اور صفات خاصہ آنحضرت ﷺمیں جمع ہوں۔ چنانچہ قرٓان کریم کی بہت سی آیتیں جن کا اس وقت لکھنا موجب طوالت ہے اسی پر دلالت کرتی بلکہ بصراحت بتلاتی ہیں کہ آنحضرت ﷺ کی ذات پاک باعتبار اپنی صفات اور کمالات کے مجموعہ انبیاءتھی۔ اور ہر ایک نبی نے اپنے وجود کے ساتھ مناسبت پاکر یہی خیال کیا کہ میرے نام پر وہ آنے والا ہے ۔اور قرآن کریم ایک جگہ فرماتا ہے کہ سب سے زیادہ ابراہیم سے مناسبت رکھنے والا یہ نبی ہے۔ اور بخاری میں ایک حدیث ہے جس میں آنحضرت ﷺ فرماتے ہیں کہ میری مسیح سے بشدت مناسبت ہے اور اس کے وجود سے میراوجود ملا ہو اہے پس اس حدیث میں حضرت مسیح کے اس فقرہ کی تصدیق ہےکہ وہ نبی میرے نام پر آئے گا۔سوا یسا ہی ہوا کہ ہمارا مسیح ؑ جب آیا تو اس نے مسیح ناصریؑ کے تمام کاموں کو پورا کیا اور اس کی صداقت کے لئے گواہی دی۔ اور ان تہمتوں سے اس کو بری قرار دیا جو یہود اور نصاریٰ نے اس پر لگائی تھیں اور مسیح کی روح کو خوشی پہنچائی۔‘‘

(آئینہ کمالات اسلام ۔روحانی خزائن جلد 15ص343)

پچھلا پڑھیں

الفضل آن لائن 20 نومبر 2020

اگلا پڑھیں

والدین سے حسن سلوک