• 12 اگست, 2020

درسِ توحید

وہ دیکھتا ہے غیروں سے کیوں دل لگاتے ہو
جو کچھ بتوں میں پاتے ہو اُس میں وہ کیا نہیں

سورج پہ غور کر کے نہ پائی وہ روشنی
جب چاند کو بھی دیکھا تو اُس یار سا نہیں

واحِد ہے لاشریک ہے اور لازوال ہے
سب موت کا شکار ہیں اُس کو فنا نہیں

سب خیر ہے اِسی میں کہ اُس سے لگاؤ دِل
ڈھونڈو اُسی کو یارو! بُتوں میں وفا نہیں

اِس جائے پُر عذاب سے کیوں دِل لگاتے ہو
دوزخ ہے یہ مقام یہ بُستاں سرا نہیں

(رسالہ تشحیذ الاذہان ماہ دسمبر1908ء)

Seek Him Alone O Friends

He watches over you while
You set your heart upon others!
What does He lack which
You seek to find in the idols?

Reflecting upon the sun,
We did not find that light which is His;
When we turned to the moon,
That too was not like the Beloved.

He is the One, has no partner,
And is Imperishable;
All others are prey to death,
He alone is Eternal.

All goodness lie
In loving Him;
Seek Him alone, O friends,
Idols are unfaithful.

Why are you fond
Of this blighted abode?
This place a veritable hell,
Not a garden!

[Tashhidh-ul-Adh-han, December 1908]

پچھلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 12 جولائی 2020ء

اگلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 13 جولائی 2020ء