• 3 جولائی, 2020

معجزہ قادیاں کر دیا

بے نشاں کو نشاں کر دیا
سارے جگ پر عیاں کر دیا
جو تھی گمنام بستی اسے
مرجعِ کل جہاں کر دیا
مانگتے تھے کوئی معجزہ
معجزہ قادیاں کر دیا
لوگ سمجھے خدا اب نہ بولے
مہدی اپنی زباں کر دیا
اک فلک بوس گونجی صدا
اس کو حق کی اذاں کر دیا
جو اکیلا چلا تھا اسے
دیکھو اب کارواں کر دیا
جو مٹانے چلے تھے ہمیں
ڈھونڈو ان کو کہاں کر دیا
جسکو کہتے تھے شر کا مکاں
اس کو دارالاماں کر دیا
بے سہاروں کا اب ایک ہی
قادیاں آستاں کر دیا
اک نئی احمدیت زمیں
اور نیا آسماں کر دیا
رہتی دنیا تلک قادیاں
امن کی داستاں کر دیا

(حافظ مبرور احمد)

پچھلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 21 جون 2020ء

اگلا پڑھیں

Covid-19 عالمی اپڈیٹ 22 جون 2020ء